Hawa Ko Cheer Ke Es Tak Sada Agar Pehunche Syed Qais Raza Urdu Hindi Poetry Lyrics

 

Hawa Ko Cheer Ke Es Tak Sada Agar Pehunche

















In Urdu


 ہوا کو چیر کے اس تک صدا اگر پہنچے

محال ہے کہ مدد کو نہ چارہ گر پہنچے

دیار عشق کو راہ سناں پہ چلتے ہوئے

جہاں پہ جسم نہ پہنچے وہاں پہ سر پہنچے

ٹھکانا دور تھا اور سامنا ہوا کا بھی

پہنچ نہ پائے پرندے سو ان کے پر پہنچے

ضعیف پیڑ نشانی تھا جو محبت کی

وہ کٹ چکا تھا مسافر جو لوٹ کر پہنچے

یہ ایک آہ محبت کی ترجمان نہیں

بہت طویل تھے قصے جو مختصر پہنچے

دعا بدست پس در تھی انتظار میں ماں

ہم ایک شب ذرا تاخیر سے جو گھر پہنچے

پہنچ تو جاتی ہے ہر بات بات کا کیا ہے

مزہ تو جب ہے کہ اس بات کا اثر پہنچے





Urdu In  English


Hawa Ko Cheer Ke Es Tak Sada Agar Pehunche 

Mahal Ha Ka Madad Ko Na Charah Gar Pehunche 

Dyar e Ishq Ko Rah Sana Pa Chalte Hoy 

Jahan Pe Jism Na Pehunche Wahan Pe Sar Pehunche 

Thikana Dur Tha Aur Samna Hawa Ka Bhi 

Pahunch Na Paye Parendy Sao En Ke Par Pahunche 

Zaeef Peer Nishani Tha Ju Muhabat Ki

Wo Kat Chuka Tha Musafir Ju Laut Kar Pehunche

Ye Aik Ah e Muhabat Ki Tarjuman Nahi 

Bhut Taweel Thy Kisey Ju Mukhtasir Pahunche

Dua Badsat Pas Dar Thi Intezar Main Maa

Hum Aik Shab Zra Takheer Se Ju Ghar Pehunche 

Paunch Tu Jati Ha Har Bat Bat Ka Kia Ha 

Maza Tu Jab Ha Keh Es Baat Ka Asar Pehunche




Credit:Syed Qais Raza



Post a Comment

0 Comments